کولمبس امریکی سرزمین پر قدم رکھنے والا پہلا شخص نہیں تھا

براعظم امریکا کی دریافت کا سہرا ہسپانوی مہم جو اور جہاز راں کرسٹوفر کولمبس کے سرباندھا جاتا ہے تاہم محققین نے انکشاف کیا ہےکہ کولمبس بحر اوقیانوس پار کرکے امریکی سرزمین پر قدم رکھنے والا پہلا شخص نہیں تھا۔ ماہرین کے مطابق کولمبس سے بھی 471  سال پہلے شمالی یورپ یا اسکنڈے نیوین ممالک سے تعلق رکھنے والے ‘وائکنگز’ بحراوقیانوس کو پارکرکے موجودہ کینیڈا کے علاقے نیوفاؤنڈ لینڈ پہنچے تھے۔خیال رہے کہ وائکنگز شمالی یورپ کے علاقوں میں بسنے والے بحری قزاق تھے جو یورپی ساحلوں پر آنے والے جہازوں اور کشتیوں کو لوٹ کرگزر بسر کرتے تھے۔برطانوی میڈیا کے مطابق اس سے قبل بھی یورپ میں یہ نظریہ موجود رہا ہےکہ کولمبس کے 1492 میں امریکا پہنچنے سے پہلے ہی یورپی افراد 1021 میں امریکا پہنچ چکے تھے تاہم یہ پہلی بار ہوا ہے کہ ماہرین نے باقاعدہ اس کی تاریخ بھی بتائی ہے جس کے مطابق وائکنگز کولمبس سے 471 سال قبل امریکی سرزمین پر قدم رکھ چکے تھے۔ معروف سائنسی جریدے ‘نیچر’ میں شائع رپورٹ کے مطابق ماہرین نے حتمی تاریخ لکڑی کے تین ٹکڑوں کی سائنسی جانچ پڑتال کے بعد دی ہے، ٹکڑے کینیڈا میں اس جگہ سے ملے تھے جس کے متعلق خیال ہے یہ کبھی وائکنگز کے زیر استعمال رہی ہے۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.