’اگنی پتھ سکیم‘ کیا ہے اور انڈیا میں اس کے باعث ہنگامہ کیوں؟

بھارتیہ جنتا پارٹی کی اگنی پتھ سکیم کے خلاف انڈیا کی متعدد ریاستوں میں پُرتشدد مظاہرے جاری ہیں اور اس سکیم کے باعث مشتعل افراد نے انڈین حکمراں جماعت کے رہنماؤں کے گھروں پر بھی حملے کیے ہیں۔

انڈین ایکسپریس کے مطابق جمعے کو مشتعل مظاہرین نے انڈین ریاست بہار کے ڈپٹی وزیراعلیٰ رینو دیوی اور پارٹی کے ریاستی صدر چمپرن سنجے جیوال کے گھروں پر حملہ کیا اور بہار، اتر پردیش، ہریانہ اور تیلنگنا میں ٹرینوں کو بھی آگ لگائی۔

ہریانہ کی حکومت نے امن و امان کی خراب صورتحال کے پیش نظر ریاست کے متعدد علاقوں میں انٹرنیٹ سروس بھی بند کر دی ہے۔

انڈیا میں اپوزیشن جماعت کانگریس کے رہنما راہل گاندھی نے اگنی پتھ سکیم پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس سکیم کو نوجوانوں نے مسترد کردیا ہے۔

پُرتشدد مظاہروں کے باعث انڈیا بھر میں 200 سے زائد ٹرینیں معطل یا منسوخ کر دی گئی ہیں اور تازہ ترین اطلاعات کے مطابق ریاست تیلنگنا میں پولیس کی مبینہ فائرنگ سے ایک شخص ہلاک ہوگیا ہے۔

رواں ہفتے منگل کو وزیراعظم نریندر مودی کی حکومت نے اگنی پتھ سکیم کا اعلان کیا تھا جس کا مقصد انڈین فوجی سروسز کی تنخواہوں اور پینشنز کے بجٹ کو کم کرنا تھا۔

سکیم کے تحت ساڑھے 17 سال سے 21 سال تک کی عمر کے نوجوان لڑکے اور لڑکیوں کو فوج میں چار سال کے لیے بھرتی کیا جائے گا اور مدت کے اختتام کے بعد ان سب میں سے صرف 25 فیصد افراد کی مدت ملازمت بڑھائی جائے گی۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.