آدھی دنیا کا چکر لگانے والا  ہائیڈروجن طیارہ!

لندن : دنیا میں کچھ عرصے سے ہائیڈروجن ایندھن سے پرواز کرنے والے مسافر طیاروں پر کام شروع کیا جا چکا ہے اور اس ضمن میں مختلف اعلانات بھی کئے جا چکے ہیں

اسی حولاے سے برطانوی ادارے ایئرو اسپیس ٹیکنالاجی انسٹیٹوٹ  ہائڈروجن کے ایندھن سے پرواز کرنے والے ایک ایسے مسافر بردار طیارے کے تفصیلا جاری کئے ہیں  جسے آدھی دنیا کا چکر لگانے کے بعد ری فیول کرنا پڑے گا

اس طیارے کو فلائی زیرو کو نام دیا گیا ہے ،  لندن سے سان فرنسسکو تک دوبارہ ایندھن  بھروانے کے بغیر ہی پہنچ سکتا ہے

اہم بات یے ہے  طیارہ کوئی فضائی آلودگی بھی خارج نہیں کرےص گا۔

انسانی سرگرمیوں سے ہر سال زمینی فضا میں 37 ارب ٹن کاربن ڈائی آکسائیڈ شامل ہوتی ہے جس میں ایک ارب ٹن سے زیادہ کاربن ڈائی آکسائیڈ تجارتی اور مسافر بردار طیاروں سے خارج شدہ ہوتی ہے

اس طیارے کے پروں کا پھیلاؤ 54 میٹر ہوگا جبکہ اس میں چار ہائیڈروجن ٹینک نصب ہوں گے

’فلائی زیرصو‘ کا پروٹوٹائپ کب مکمل ہو کر پہلی پرواز کرے گا؟ فی الحال اسکے بارے میں کچھ نہیں بتایا گیا۔ البتہ یہ اس منصوبے سے فضائی سفر کو آلودگی سے پاک بنانے میں بہت مدد ملے گی۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.