کورونا سے ڈپریشن اور خودکشی کے واقعات میں اضافہ

سندھ مینٹل ہیلتھ اتھارٹی کی تحقیق میں حیرت انگیز انکشافات سامنے آگئے، رپورٹ کے مطابق 42 فیصد افراد ڈپریشن کے مرض میں مبتلا پائے گئے جن میں سے 25 فیصد افراد خودکشی کی جانب مائل نظر آئے۔۔تحقیق کے دوران مجموعی طور پر 62 فیصد افراد کے بے روزگار ہونے کا بھی انکشاف ہوا ہے  ۔تحقیق کے مطابق دیہی آبادی کے 81  جبکہ شہری آبادی کے 43 فیصد افراد  کورونا سے شدید متاثر ہوئے ،مشکل حالات میں 36 فیصد افراد نے دیگر لوگوں سے پیسے ادھار لیے۔۔ 21 فیصد افراد اپنی جائیدادیں، مال اور مویشی فروخت کرنے پر مجبور ہوئے۔۔76 فیصد افراد کو احساس یا دیگر سرکاری پروگرامز کے تحت کوئی مالی مدد نا مل سکی۔۔سندھ مینٹل ہیلتھ اتھارٹی کے مطابق 48 فیصد مرد  اور  52 فیصد خواتین ریسرچ کا حصہ بنے۔۔صوبے سے مجموعی طور پر 14 سو 94 افراد پر تحقیق کی گئی ، سروے سندھ کے 12 اضلاع میں کیا گیا۔۔شہری اور دیہی آبادی سے چھ چھ اضلاع منتخب کیے گئے ۔۔یہ سروے سندھ مینٹل ہیلتھ اتھارٹی کے تحت مختلف این جی اوز اور اداروں کی معاونت سے کیا گیا ۔۔ ہینڈز ، ڈاؤ یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز ، لیاقت یونیورسٹی آف میڈیکل اینڈ ہیلتھ سائنسز اور جامعہ کراچی نے تحقیق میں حصہ لیا ۔۔ذوالفقار علی بھٹو لاء کالج اور ایدھی فاؤنڈیشن نے بھی ریسرچ میں معاونت کی ۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.