ذوالفقار علی بھٹو اور بلاول بھٹو میں کیا چیزیں مماثلت رکھتی ہیں !

بلاول بھٹو کے حوالے سے خیال کیا جاتا ہے کہ شاید وہ اپنے نانا ذوالفقار علی بھٹو کے نقشِ قدم پر چلنا چاہتے ہیں جنہوں نے وزیر خارجہ کے  عہدے پر رہ کر اپنا نام اور مقام پیدا کیا۔

دلچسپ اتفاق یہ ہے کہ وزیرِ خارجہ بنتے وقت بلاول اور ان کے نانا کی عمریں تقریباً برابر ہیں۔

بلاول کی عمر اس وقت 34 برس کے قریب ہے، جب کہ ان کے نانا یہی عہدہ سنبھالتے وقت ان کے تقریباً ہم عمر، یعنی 35 برس کے تھے۔

صرف ذوالفقار علی بھٹو نہیں بلکہ بلاول کی والدہ بےنظیر بھٹو بھی وزارتِ خارجہ میں کام کر چکی ہیں اور اپنے والد کی زندگی میں تاثر عام تھا کہ بھٹو وزارتِ خارجہ کے لیے اپنی صاحبزادی کی تربیت کر رہے ہیں۔ شاید یہی وجہ ہے کہ تاریخ ساز شملہ معاہدے کے وقت بھٹو بےنظیر کو ساتھ لے کر گئے تھے۔

1971 کی پاک بھارت جنگ کے بعد پاکستان کے صدر ذوالفقار علی بھٹو بھارت کی وزیر اعظم اندرا گاندھی کی دعوت پر شملہ پہنچے۔ اس دورے میں ان کی 19 سالہ صاحبزادی بے نظیر بھٹو بھی شامل تھیں، جنہیں وہ مستقبل کی وزیر خارجہ اور وزیراعظم کے عہدے کے لیے تیار کر رہے تھے۔

جون 1977 میں بے نظیربھٹو برطانیہ سے تعلیم مکمل کرنے کے بعد وطن واپس پہنچیں، جہاں انہیں وزارت خارجہ میں تعینات کیا گیا.

اب بلاول بھٹو وزیر خارجہ کے عھدے پر اپنی زمیداری نبھا رہے ہیں.

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.