حیران کن طور پر، ہالینڈ کے لوگوں کا قد چھوٹا ہونے لگا

ایمسٹر ڈیم:
ویسے تو یے فطرتی عمل ہے کے انسان کی عمر بڑھنے اور صحتمند غذائوں کے استعمال سے اسکی صحت اورجسامت میں بڑھائو آتا رہتا ہے، تاہم غذائوں کی باعث قد کا کم ہونا یا جسم سکڑنا ایک انوکہا عمل ہے
ڈچ قوم کاشمار دنیا کی طویل قامت قوم میں کیا جاتا ہے، لیکن ناقص اور غیر صحت بخش غذاؤں کے استعمال نے ان کے اوسط قد میں کمی کرنا شروع کردی ہے۔
ایک رپورٹ کے مطابق نیدر لینڈ کے قومی شماریاتی دفتر نے اس بات کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ دنیا کی سب سے طویل قامت رکھنے والی قوم کا قد سال بہ سال کم ہوتا جا رہا ہے۔
حکومتی ادارے برائے شماریات کے مطابق 19 سے 60 سال کی عمر کے 7 لاکھ 20 ہزار افراد پر ہونے والے سروے سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ 2001 میں پیدا ہونے والے لڑکوں کا قد 1980 میں پیدا ہونے والی نسل سے 1 سینٹی میٹر اور لڑکیوں کا قد 1 اعشاریہ 4 سینٹی میٹر کم ہے۔
نیدر لینڈ میں مقامی باشندوں میں بھی نشوونما اپنے آباؤ اجداد کی نسبت ایک جگہ ٹہر گئی ہے۔ مردوں کے قد میں اضافہ نہیں ہو رہا جب کہ خواتین کے قد میں تنزلی کا سلسلہ جاری ہے۔
جامعہ گرونیگین کے شعبہ برائے سوشل سائنسز کے سربراہ ڈاکٹر گیریٹ اسٹلپ نے بتایا کہ میں سمجھتا ہوں کہ 2007 میں آنے والے معاشی بحران نے ملک میں قد سے متعلق مسائل میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ معاشی مشکلا ت کی وجہ سے غریب گھرانوں میں پیدا ہونے والے بچے صحیح غذا نہیں کھا سکے یا غالبا عدم مساوات میں اضافہ ہو گیا ہے جس کا نتیجہ اوسط قد میں کمی کی صورت میں سامنے آرہا ہے۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.