چین کا ایک میل لمبا خلائی جہاز آمریکا کے لئے مسئلہ بن گیا!

چین کا ایک میل لمبا خلائی جہاز آمریکا کے لئے مسلا بن گیا

چین نے دنیا کا سب سے لمبا خلائی جہاز بنانے کا اعلان کیا ہے

نیشنل نیچرل سائنس فاؤنڈیشن آف چائنا‘‘ (NNSFC) کے ایک اعلان میں چینی سائنسدانوں کو ایک ’’بہت بڑے خلائی جہاز/ خلائی اسٹیشن‘‘ پر تحقیق کی دعوت دی گئی ہے جس پر مغربی ممالک، بالخصوص امریکا میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے۔

ممکنہ طور پر یہ خلائی جہاز یا خلائی اسٹیشن تقریباً ایک میل لمبا ہوگا جس کی ابتدائی تحقیق کےلیے ڈیڑھ کروڑ یوآن جو (تقریباً ایک ارب پاکستانی روپے) کی رقم بھی منظور کی جاچکی ہے۔

ے خبر سن کر لائیو سائنس، دی نیکسٹ ویب، انٹرسٹنگ انجینئرنگ اور یونیورس ٹوڈے پر مضامین شائع کیے گئے جن میں چین کے خلائی منصوبوں پر اعتراضات کے علاوہ بہت بڑے خلائی جہاز/ خلائی اسٹیشن کے تصور پر شکوک و شبہات کا اظہار کیا گیا ہے۔

بظاہر ایسا لگتا ہے کہ چینی ماہرین بھی اس پہلو سے بے خبر نہیں کیونکہ ’’نیشنل نیچرل سائنس فاؤنڈیشن آف چائنا‘‘ نے اپنے اعلان میں واضح کیا ہے کہ انہیں ایسے ہلکے پھلکے لیکن مضبوط مادّوں کی تلاش ہے جو خلاء کے بے وزن اور خطرناک شعاعوں سے بھرپور ماحول کا سامنا برسوں تک کرسکیں۔

دوسری جانب چین کے خلائی تحقیقی ادارے بھی ایسے راکٹوں پر کام کررہے ہیں جو موجودہ طاقتور ترین خلائی راکٹوں سے بھی کئی گنا طاقتور ہوں گے اور ایک پرواز میں سیکڑوں ٹن وزنی سامان خلاء میں پہنچا سکیں گے

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.