چاند سےدھرتی پر سیلاب آئے گا!

کائنات میں موجود ستارے اپنے مقررہ حدوں اور مہور میں سفر کرتے رہتے ہیں۔

ہزاروں سالوں سے ستاروں کا یہ سفر مخصوص رخ اور رفتار سے جاری ہے، جس کی وجہ سے زمین پر رات اور دن کا ہونا، موسموں کی تبدیلی، سورج اور چاند گرہن سمیت د یگر اثرات ہوتے رہتے ہیں۔

دھرتی اور دیگر ستاروں کے ساتھ چاند بھی مختلف طرح سے اپنا چکر مکمل کرتا ہے لیکن اس بار چاند کی ڈگمگاہٹ دھرتی پر سیلاب لانے کا سبب بنے گی۔

ناسا کے ماہرین نے کہا ہے کے 2030  میں چندا ماموں کی ڈگمگاہٹ کے باعث دھرتی کے ساحلی علاقوں میں سیلاب آ سکتا ہے اور ایسا بالخصوص آمریکا کے علاقوں میں ہوگا، جہاں پانی کی سطح بلند ہوگی اور شہری سیلاب آ سکتے ہیں۔

ماہرین کا کہنا ہے کے آمریکی ساحلی علاقوں الاسکا وغیرہ میں 2030 سے ہی ’بلند لہروں میں ڈرامائی‘ اضافہ ہوگا، جو 2035 کے آس پاس شدت اختیار کرے گا۔

پروفیسر فل تھامپسن کا کہنا ہے کے اگر 2030 کے عشرے میں ہر ماہ 10 سے 15 مرتبہ ساحلوں کا پانی چھلک کر شہروں میں در آتا ہے تو اس سے معمولاتِ زندگی درہم برہم ہوجائے گی۔

چاند کی ڈگمگاہٹ کا دورانیہ 18.6برس کا ہوتا ہے، سب سے پہلے اسے 1728 میں نوٹ کیا گیا تھا۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.