ڈیجیٹل دور میں ہاتھ سے لکھا جانے والا دنیا کا واحد اخبار

‏بھارت سے شائع ہونے والا روزنامہ "دی مسلمان” دنیا کا واحد اردو اخبار ہےجو گزشتہ 94 سالوں سے ہاتھوں سے لکھا جار ہا ہے۔۔ رونامہ خلیج ٹائمز کا کہنا ہے کہ خطاطی کے ذریعے شائع ہونے والا یہ اردو کا سب سے پرانا روزنامہ ہے۔۔ جو اب تک شائع ہورہا ہے‘ پرنٹنگ اور کمپیوٹر کی جدید ٹیکنالوجی کی ‏دستیابی کے باوجود "دی مسلمان“پرانے طریقے پر شائع ہورہاہے۔

1927ء سے مسلسل شائع ہونے والے اس اخبار کے بانی سید عظمت اللہ تھے۔شام کے چار صفحات پر شائع ہونے والے اس اخبار کا دفتر800 مربع فٹ کے ایک کمرے پر مشتمل ہے جس کے ایک کونے میں خطاطی کا کام ہوتا ہے۔۔خطاطی کا عملہ چھ افراد پر  ‏مشتمل  ہے جن میں چار خواتین شامل ہیں۔ایک خطاط کو ایک صفحہ تین گھنٹوں میں تحریر کرنا ہوتا ہے۔

دی مسلمان کے دفتر میں عملے کو تمام سہولیات میسر نہیں ۔۔۔صرف دیوار کے دو پنکھے‘ تین بلب‘ اور ایک ٹیوب لائٹ ہے‘ پچھلے سال ہی مدیر کے کمرے میں ایک کمپیوٹر اور ایک پرنٹر لگایا گیا۔۔‘ اخبار کی انتظامیہ کا کہنا ‏ہے کہ ان کو اردو خطاطی سے محبت ہے اسی لئے اس طریقے کو انہوں نے جاری رکھا ہوا ہے ،۔۔  اگر کوئی ایک خطاط بیمار  ہوجاتا ہے  تو اس کی جگہ دوسرے کو ڈبل شفٹ میں ڈیوٹی کرنا پڑتی ہے ۔۔‘ ہر خطاط کو فی صفحہ60روپے معاوضہ دیا جاتا ہے۔ اس اخبار کے تین رپورٹر ہیں

"دی مسلمان“ کے تقریبا 23,000 صارفین ہیں جو ہر ‏سال دس ڈالر تک ادائیگی کرتے ہیں۔۔۔ اس اخبار کی قیمت 75پیسہ ہے‘ اخبار کی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ ڈیجیٹل  دور میں ہاتھ سے لکھا جانے والا اخبار چلانا ایک بہت بڑا چیلنج ہے۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.