سعودی عرب میں خواتین کے لئے علیحدہ ساحل بنے گا

سعودی عرب میں گزشتہ چند سالوں سے خواتین کو معاشرے کے اہم امور کا حصہ بننے کی اجازت دینے کا سلسلہ جاری ہے  اوراسی سلسلے کو جاری رکھتے ہوئے سعودی عرب میں خواتین کے لیے علیحدہ ساحل بنانے کی تیاریاں شروع ہو گئی ہیں۔اسلامی دنیا کے اہم ترین ملک سعودی عرب میں خواتین کے لیے مختلف کھیلوں میں حصہ لینے کی راہیں بھی ہموار کی گئی ہیں، انہیں کسی مرد سرپرست کے بغیر بیرون سفر کی اجازت بھی دی جاچکی ہے اور اب سعودی عرب میں خواتین کے لیے انڈسٹریل سٹی کی جانب سے علیحدہ ساحل الجبیل تیار کیا جارہا ہے۔اس حوالے سے الجبیل انڈسٹریل سٹی کی بلدیاتی کونسل نے بتایا ہے کہ الجبیل میں خواتین کے لیے پہلا علیحدہ ساحل کورنیش سی فرنٹ کے شمال میں بنایا جائے گا، اور ساحل کا ڈیزائن بھی تیار ہوچکا ہے۔ بلدیاتی کونسل کے چیئرمین نایف الدویش کے مطابق خواتین کے لیے تیار کیے جانے والے اس ساحل پر نوے روز کے اندر کام شروع کیا جائے گا، تیار کیا جانے والا یہ ساحل، علاقے کے سیاحتی منصوبوں میں سے ایک ہوگا اور بلدیاتی کونسل نے اس حوالے سے 5 سالہ منصوبہ تیار کیا ہے۔ان کے بقول اس ساحل کا مقصد بلدیاتی کونسل کی سرمایہ کاری میں اضافہ اور معیارِ زندگی بلند کرنا ہے، جبکہ علیحدہ ساحل پر خواتین کی پراائیویسی کا خاص خیال رکھا جائے گا۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.