کورنا ویکسینیشن لگنے کاعمل شروع ہوگیا

تحریر ماریہ اسماعیل 

سندھ بھر میں کورونا وائرس سے بچاؤ کی ویکسینیشن کا عمل شروع ہوگیا ہے  کراچی سمیت 6 شہروں میں 15 ایڈلٹ ویکسینیشن سینٹرز  قائم کئے گئے ہیں۔

سندھ میں کورونا ویکسین کاعمل شروع ہوگیا ہے ، پہلے مرحلے میں کورونا کیخلاف لڑنے والے فرنٹ لائن ورکرز کو ویکسین دی جائے گی۔  چین سے منگوائی گئی ویکسین سائنوفارم وائرس کیخلاف 90 فیصد تک مؤثر ہے۔

اس حوالے سے صوبائی وزیر صحت نے بتایا کہ ویکسین کیلئے کراچی کے تمام اضلاع کی سہولت کو مدنظر رکھا گیا ہے، شہر قائد میں سندھ گورنمنٹ اسپتال کورنگی، اربن ہیلتھ سینٹر ملیر، اوجھا اسپتال، قطر اسپتال، جناح اسپتال، خالق دینا ہال، سندھ گورنمنٹ اسپتال لیاقت آباد، ڈاؤ انٹرنیشنل ڈینٹل کالج اور چلڈرن اسپتال میں ویکسینیشن سینٹرز بنائے گئے ہیں۔

کراچی کے علاوہ جامشورو، لاڑکانہ، میرپور خاص، شہید بے نظیر آباد اور سکھر میں بھی کرونا وائرس سے بچاؤ کیلئے ویکسینیشن سینٹرز قائم کئے گئے ہیں۔

حکومت سندھ کے مطابق  کراچی میں جوسینٹرز بناگٸے ہیں ان میں سندھ گورنمنٹ اسپتال کورنگی نمبر 5۔جس میں گنجائش 1800 ڈوزز روزانہ

کی ہےجبکہ ہیلتھ ورکرز کی تعداد4910 ہے ۔سیسی اسپتال ملیراس میں گنجائش 1200 ڈوزز روزانہ ہے ۔ہیلتھ ورکرز کی تعداد4170 ہے۔ڈاؤ انٹرنیشنل ڈینٹل کالج میں ڈوززروزانہ کے بنیاد پر لگنے کی گنجائش 1800 ہے۔آغا خان یونیورسٹی اسپتال میں گنجائش1900 ڈوزز روزانہ کی ہے جبکہ

ہیلتھ ورکرز کی تعداد7490ہے ۔

سندھ گورنمنٹ قطر اسپتال، اورنگی ٹاؤن کی گنجائش  1800 ڈوزز روزانہ کی ہے۔ہیلتھ ورکرز کی تعداد 5853ہے۔سندھ گورنمنٹ اسپتال لیاقت آباداس میں روزانہ ڈوزز کی گنجاٸش 1800 کی ہے اس میں ہیلتھ ورکرز کی تعداد2590ہے ۔جبکہ

سندھ گورنمنٹ اسپتال نیو کراچی اس میں گنجائش 1200 ڈوزز روزانہ کی ہے ہیلتھ ورکرز کی تعداد2382ہے ۔سندھ گورنمنٹ چلڈرن اسپتال اس میں گنجائش 1800 ڈوزز روزانہ

کی ہے ۔ہیلتھ ورکرز کی تعداد 2541 ہے ۔جے پی ایم سی میں گنجائش 1800 ڈوزز روزانہ کی ہے ۔ہیلتھ ورکرز کی تعداد 12425ہے۔خالقدینا ہال میں گنجائش1800 ڈوزز روزانہ ہے

ہیلتھ ورکرز کی تعداد10639ہے

دوسری جانب لمس جامشورو میں گنجائش 2400 ڈوزز روزانہ ہے جبکہ ہیلتھ ورکرز کی تعداد: 38400 ہے ۔سی ایم سی اسپتال لاڑکانہ میں گنجائش 1800 ڈوزز روزانہ کی ہے ہیلتھ ورکرز کی تعداد19477ہے نیو ڈی ایچ کیو بلڈنگ میرپور خاص

میں گنجائش 1800 ڈوزز روزانہ کی ہے۔جبکہ ہیلتھ ورکرز کی تعداد 13895ہے۔ایم سی ایچ سینٹر سوسائٹی، نوابشاہ، شہید بینظیر آبادمیں روزانہ ڈوزز کی گنجاٸش 1800کی ہےجبکہ ہیلتھ ورکرز کی تعداد 16154ہے۔آئی ایچ ایس اسپتال، لیبر فلیٹس سکھرمیں گنجائش 1800 ڈوزز روزانہ کی ہے ۔ہیلتھ ورکرز کی تعداد 18280ہے

صوباٸی وزیر صحت نے کہا کہ جن اضلاع میں کورونا کیسز زیادہ رپورٹ ہوئے، انہیں ویکسینیشن کے پہلے مرحلے کیلئے منتخب کیا گیا ہے، پرائیویٹ سیکٹر میں کام کرنیوالے ہیلتھ کیئر ورکز کو بھی پہلے مرحلے کی ویکسینیشن میں شامل کیا جائے گا، ویکسین کی ٹریسنگ کیلئے نیشنل امیونائزیشن مانیٹرنگ سسٹم میں ڈیٹا اپلوڈ کیا جارہا ہے، پہلے مرحلے کی شفافیت کو یقینی بنانے کیلئے ڈیٹا مرتب کررہے ہیں۔ڈاکٹر عذرا فضل پیچوہو کا کہنا ہے کہ دوسرے مرحلے میں 60 سال سے زیادہ عمر کے افراد جبکہ دیگر شہریوں کو آخری مرحلے میں ویکسین لگائی جائے گی، آخری مرحلے میں ویکسینیشن سینٹرز کی تعداد سندھ کے تمام اضلاع تک بڑھادیں گے۔

ڈی جی ہیلتھ سروسز سندھ ڈاکٹرارشاد میمن نے کہاکہ اب تک ہم ایک لاکھ سترہزار افراد کی رجسٹریشن کرچکے ہیں جبکہ حاملہ خواتین کوویکسین نہیں لگی جاٸے گی ۔

انہوں نے کہاکہ جن اسپتالزمیں ویکسینشن سینٹر بناٸے گٸے ہیں وہ نادراسے مشروط ہے ۔ارشاد میمن کاکہناتھاکہ ہیلتھ کیٸر ورکرز نادرا سے موصول اوپی ٹی کوکوڈدکھاٸیں گے ۔اس بعد اگلا مرحلہ شروع ہوگا۔ان کاکہناتھاکہ ویکسین سے قبل 5سوالوں پرمشتمل سوالنامہ پرکروایاجاٸے گا۔سوالوں پر پورااترنے کے بعد ویکسین لگانے کاتعین کیاجاٸے گا۔اس کے بعد بلڈپریشر ۔ہارٹ ریٹ اور درجہ حرارت معلوم کرنے بعد ویکسین لگاٸی جاٸے گی ۔ویکسینشن صبع آٹھ سے رات آٹھ بجے تک لگاٸی جاٸے گی ۔

دوسری جانب وزیراعلی سندھ مرادعلی شاھ  نے طبی عملہ کی ویکسین لگنے کے پہلے مرحلے کاڈاٶیونیورسٹی اسپتال کورونا ویکسینیشن سینٹر کاافتتاح کردیا۔

اس موقع پر وزیراعلی سندھ مرادعلی شاھ نے کہاکہ ہم چین کے شکرگذار ہے کہ انہوں نے پاکستان کو5لاکھ ڈوز دے ۔ان کاکہناہے کہ وفاقی حکومت کی پالیسی سمجھ سے باہر ہے سندھ حکومت کوصرف 38ہزار ڈوز دیے ہیں ۔

یہ ڈوزہم فرنٹ لاٸن ورکرز کولگارہے ہیں ۔سندھ میں 3لاکھ 20ہزار ہیلتھ ورکرز ہیں ۔ان میں ایک لاکھ 80ہزار فرنٹ لاٸن ورکرز ہیں ۔وزیراعلی سندھ کاکہناتھاکہ پہلے مرحلے میں کراچی ۔حیدرآباد اور شہیدبینظیر آباد میں شروع کررہے ہیں ۔ان شہروں میں کورونا کے زیادہ مریض ہیں ۔انہوں نے بتایاکہ 1166پررجسٹریشن کاعمل سمجھ سے باہرہے ۔کراچی کے لیے 62سے 63ہزار ویکسین دی گٸی ہے انہوں مزید کہاکہ اس کی شفافیت کاعمل کس حد تک بہتر ہے یہ معلوم نہیں ہے ۔

یادرہے گذشتہ روز  چین سے سائنو فارم ویکسین کی 5 لاکھ خوارکیں ڈوزز چین نے پاکستان کو عطیہ کی ہیں جبکہ کوویکس نے بھی ایک کروڑ 70 لاکھ خوراکیں فراہم کرنے کی یقین دہانی کرادی ہے۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.