ممتاز ترقی پسند شاعرہ مرحومہ فہمیدہ ریاض کی بیٹی نے والدہ کو دیا جانے والے صدارتی ایوارڈ وصول کرنے سے انکار کیوں کیا؟

معروف شاعرہ فہمیدہ ریاض کی بیٹی ویرتا علی اجن کا کہنا ہے کہ فہمیدہ ریاض کی بیٹی ہونے پر انہیں فخر ہے،ان کے کام پر ان کی جدوجہد پر اگر انہیں کوئی ایوارڈ ملے تو بہت فخر محسوس ہوگا لیکن انہوں نے ملک میں صحافیوں اور ادیبوں کے اغوا اور زدو کوب کے خلاف احتجاج کے طور پر اپنی مرحومہ والدہ کے نام پر حکومت کی جانب سے اعلان کردہ صدارتی ایوارڈ لینے سے انکار کیا ہے ۔

ویرتا علی اجن نے عوامی آواز ٹی وی سے خصوصی گفتگو میں کہا کہ  ایوارڈز سیکشن نے ان سے ان کی امی کے ایوارڈ کی تقریب سے متعلق رابطہ کیا ۔انہوں نے کہا کہ وہ اس وقت ان کے کام کے لیے ایوارڈ کیسے قبول کرسکتی ہیں؟ جب مصنفین اور صحافیوں کو اغوا کیا جاتا ہو، ان پر تشدد کیا جاتا ہو یہاں تک کہ قتل کردیا جاتا ہو، ہراساں کرنے والوں کو ایوارڈ دیے جارہے ہیں۔۔

موجودہ حالات کو دیکھ کر کہاجا سکتاہے کہ جس طرح آج کل لوگوں کی سرویلنس کی جارہی ہے وہ جنرل ضیا کے دور میں بھی نہیں تھی ، آج کل فیس بک، موبائل اور شناختی کارڈ کی چپ کے ذریعے آپ کو ٹریس کیا جاتا ہے

ان کا کہنا کہنا تھا کہ وہ چاہتی ہیں کہ آنے والے دنوں میں نوجوانوں میں شعور بڑھے اور وہ کھلی آنکھوں سے اپنے ارد گرد کے ماحول کو دیکھیں

ویرتا علی نے کہاکہ آج کل کی میڈیا میں بھی بہت کم سچ دکھایا اور سنایا جاتا ہے ، لوگوں کو نوجوانوں کو چیزوں کا صرف ایک ہی رخ دکھایا جاتا ہے ۔۔جو انتہائی خطرناک ہے

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.