بھارت سن لو ! کشمیر بنے گا پاکستان‎

کاوش میمن

پاکستان میں ہر سال کی طرح اس سال بھی 5 فروری کو کشمیری عوام سے بھرپور یکجہتی کا اظہار کیا گیا ملک بھر تقریبات کا انعقاد ہوا  انسانی ہاتھوں کی زنجیریں بنائی گئی کشمیریوں سے والہانہ محبت کا اظہارکیا گیا  بھارت کئی برسوں سے مقبوضہ جموں و کشمیر پر قابض ہے،  معصوم کشمیریوں پر مظالم اور بربریت ڈھائی جارہی ہے اس قدر ظلم و ستم کے باجود کشمیری عوام میں آزادی کا جذبہ کم نہیں ہوا اور وہ اس جدوجہد میں مصروف عمل ہیں مودی سرکار اور اس کے گنڈوں نے بھارت میں مسلمانوں کا جینا حرام کردیا ہے ۔ مقبوضہ جموں و کشمیر میں گزشتہ تین ماہ سے کرفیو نافذ کیا ہوا ہے لوگ گھروں میں محصور ہیں۔  جس کی وجہ سے جنت نظیر وادی کو دنیا کی سب  سے بڑی جیل میں تبدیل کردیا گیا ہےجس کی وجہ سے   نظام زندگی مفلوج ہے بھارتی فوج  بد حواس ہوچکی ہے  کشمیری مائوں اور بہنوں کے ساتھ جنسی زیادتی کے واقعات بھی رپورٹ ہوچکے ہیں  بچوں اور بزرگوں  پر پیلٹ گنز کا استمعال کیا جارہا ہے۔

انتہائی دکھ اور تکلیف کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ کشمیری عوام اتنی تکالیف برداشت کررہی ہے  تو دوسری جانب عالمی برادری ہے جو ان مظالم پر خاموش ہے اگر اس طرز کے ظلم کسی دوسرے مذہب یا کسی دوسری قوم پر ہوتے تو اب تک دنیا میں کہرام برپا ہوتا مسلمان کا خون اتنا سستا ہے کہ کشمیر میں بھارت کی ریاستی دہشتگردی سے ہزاروں افراد بھینٹ چڑھ چکے ہیں مگر دنیا اس کو نظر انداز کررہی ہے۔

پاکستان نے ہر پلیٹ فورم پر کشمیریوں کے لیے آواز بلند کی وزیراعظم عمران خان نے اقوام متحدہ میں تقریر کرکے دنیا کو خبردار کیا کہ دو ایٹمی مملک کے درمیان جنگ ہوئی تو پورا خطہ اس کی لپیٹ میں آئے گا اور سب کا نقصان ہے، تاریخ اٹھا کر دیکھ لیں دنیا میں جتنی جنگیں لڑی گئیں تباہی اور بربادی کے سواء کچھ ہاتھ نہیں آیا جنگوں سے مسائل کا حل ممکن نہیں جنگ خود ایک بہت بڑا مسئلہ ہے۔

مگر ایسا لگتا ہے کہ مودی کو اس بات کا علم نہیں ہے اور گجرات کے کسائی پر جنگ کا بھوت سوار ہے اور جو پورے خطے کے ساتھ ساتھ  خود ہندوستان کے لیے بھی خطرناک ہے۔

مودی کو یاد رکھنا چاہیے کہ پاکستانی قوم اپنا دفاع کرنا جانتی ہے اور کئی محاذوں پر بھارت کو شکست کا مزہ چکھایا بھی ہے جس کی ایک مثال یہ ہے کہ بزدل بھارت نے رات کی تاریخی میں پاکستانی حدود میں دخل اندازی کر کے بڑی بڑھکیں ماری تھیں جس کے بعد پاکستان کی آرمی نے بھارت کی گیڈر بھبکیوں کا جواب دیتے ہوئے  بھارتی جہاز کو مار گرا کر پائلیٹ کو بھی گرفتار کرلیا تھا اور پھر خوب خاطر تواضوں کے بعد بڑے دل کا مظاہرہ کرتے ہوئے بھارت کے حوالے کردیا  پاکستانی آرمی نے بھارت کو پیغام دیا کہ اب اشتعال انگیزی کرنے سے پہلے اپنے پائلیٹ سے پوچھ لینا کے پاکستانی چائے کیسی تھی ۔

کشمیر کا پر امن حل اقوام متحدہ کی قراردادوں کے ذریعے ہی ممکن ہے عالمی برادری کو اس میں اپنا کردار ادا کرنا ہوگا کیونکہ لاکھوں کشمیریوں کی زندگیوں کو بھارت کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑا جاسکتا ہے پوری دنیا کو ایک پیلٹ فورم پر آکر بھارت کو یہ پیغام دینا ہوگا کہ کشمیر کو آزاد کرو اور یہ ریاستی دہشتگردی بند کرو ،بھارت کو اب ہوش کے ناخن لینے چاہیے کہ ان کے مظالم سے کشمیری عوام ڈرنے اور ہارنے والی نہیں ہے کشمیریوں کو ان کا حق مل کر رہے گا صرف کشمیری ہی نہیں بھارت میں بسنے والی دیگر کئی قومیں بھی بھارت سے آزدی کا مطالبہ کررہی ہیں۔

5 فروری کشمیری عوام سے یک جہتی اپنی جگہ لیکن اب حقیقی معنوں میں کشمیریوں کے ساتھ شانہ بشانہ ہونے کی ضرورت ہے بھارت کو دوٹوک پیغام دینا چاہیے کہ تمہارے ان مظالم سے کشمیری عوام ڈرنے والی نہیں ہے بلکہ وہ ان مظالم کا ڈٹ کر مقابلہ کررہی ہے اور بھارت سے آزدی کا مطالبہ کررہی ہے۔

آج کے دن پاکستانی عوام کشمیریوں سے عہد کرتی ہے کہ بھارت سے آزدی تک ان کی حمایت جاری رکھیں گے پوری قوم  بھارت کو یہ پیغام دے رہی ہے کہ کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے کشمیری عوام کے دل سے پاکستان کی محبت کو کسی صورت جدا نہیں کیا جاسکتا اسی لیے تو پاکستانی عوام بھی کشمیریوں کی محبت کا جواب اس انداز میں دے رہی کہ وہ وقت دور نہیں جب”  کشمیر بنے گا پاکستان "۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.