نیا سال اور ہم

علی عابد سومرو

                              سال آئیں یا جائیں۔۔ ہمیں کوئی فرق نہیں پڑتا ۔۔۔ہم سب کی قسمت کا چرخہ اسی طرح ہی چلتا رہے  گا ۔۔ہمارے مقدر بدلیں گے نہ ہی ہماری روش ۔۔۔بس بدلے گا تو صرف ایک ہندسہ ۔

یہ غلط ہے کہ ہم پچھلے سال سے سیکھتے ہیں ۔۔ سالوں سے ہم نے سیکھنا چھوڑدیا ہے ۔۔اب ہم صرف اور صرف چلنا جانتے ہیں ۔۔ان راہوں پر جو ہمارے لئے پہلے سے ہی متعین ہیں

          کرپشن کی ، ملاوٹ کی ، دو نمبری کی ، ایک دوسرے کو دھوکہ دینے کی ، کلمہ پڑھ کرغلط بیانی کرنے کی ،غریبوں اوریتیموں کے حقوق سلب کرنے کی ، دکھاوے کے لیے اپنا سب کچھ لٹانے کی ، ایمانداری کی بجائے بے ایمانی پر ہی ٹھان لینے کی

        ہم نئی راہیں تلاش نہیں کرتے۔۔ وقت ہمیں جس طرف لے جانا چاہتا ہے ہم اسی طرف ہی چل پڑتے ہیں ۔۔ہم تو بس تماشبین بن کر رہ گئے ہیں ۔۔

       نئے سال پر جشن مناکر، فائر کھول کر اور ون ویلنگ  کرکے اپنی کھوکھلی خوشی، انا اوردکھاوے کا اظہار کرتے ہیں

14 اگست سمیت تمام چھوٹے بڑے دنوں پردکھاوے کے جشن مناکرملک اور قوم سے جھوٹی محبت کےدعوے دہراتے رہتے ہیں ۔

         ہم نے اپنے اسلامی اوصاف کو بھی نظر انداز کررکھا ہے ۔۔۔بڑے بڑے دنوں پر بھی دکھاوے کے سوا کچھ کرنہیں پاتے

         ہماری باتوں، ہمارے رویوں سے کہیں بھی کسی کی بہتری اوراچھائی کی ایک فیصد بھی جھلک نظر نہیں آتی ۔۔ہم بس اب ہم بھی نہیں رہے ۔۔۔ میں ہوگئے ہیں اور جب انسان ہم میں سے میں ہوجاتا ہے تو پھر اس کا سب چلا جاتا ہے

         اس کے لئے پھر سال بدلنے کی کوئی اہمیت نہیں رہتی ۔۔وہ تو بس ہر گھڑی پیسوں پر اپنا لباس، اپنے رویے، اپنی ہمدردیاں، حمایتیں اورحتیٰ کہ اپنا دین اور ایمان بھی بدلتا رہتا ہے

      لوگ غالباَ یہ سمجھنے لگتے ہیں کہ نیا سال آنے کے بعد خوشیاں اورترقیاں خود بخود آجاتی ہیں ۔۔۔لیکن یہی ہم سب کی بھول ہے ۔۔۔نیا سال کسی کے لئے کچھ بھی لیکر نہیں آتا ۔

       انسان اپنے لیے خود بناتا ہے ۔۔اپنا حال ، اپنا مستقبل ، یہ سال تو یونہی بدلتے رہتے ہیں ۔۔کسی سال اگر سچائی، ایمانداری اور لگن کے ساتھ محنت کی ہوگی تو وہ سال ہمیں اپنے لئے خوشحال نظر آئے گا ۔۔۔

      ہم ہر سال میں جو بیج بوتے ہیں ہمیں سال کے آخر میں اس کا پھل اچھائی، بہتری یا پھر برائی یا خرابی کی صورت میں ضرور نظر آتا ہے ۔،اس لیے ہمیں یہ کوشش کرنی چاہیے کہ ہم سال کے ساتھ اپنی قسمت بدلنے کے عام تصور کو تبدیل کریں اور نئے سال میں کچھ نیا کرنے کا عزم اور تہیہ کرلیں ۔

You might also like

Leave A Reply

Your email address will not be published.